Jaam Khankay Tu Sanbhala Na Gaya Dil Tum Se

جام کھنکے تو سنبھالا نہ گیا دل تم سے

جام کھنکے تو سنبھالا نہ گیا دل تم سے

ہے ابھی دور بہت ضبط کی منزل تم سے

ہم تو دریا میں بہت دور نکل آئے ہیں

لوٹ جاؤ ابھی نزدیک ہے ساحل تم سے

جستجو سرحد ادراک سے آگے نہ بڑھی

دو قدم طے نہ ہوا مرحلۂ دل تم سے

خلوت شوق کے در بند کئے لیتا ہوں

اب شکایت نہ کرے گی کوئی محفل تم سے

سخت جانی مری آسودۂ خنجر تو نہ تھی

کیوں نکالا گیا حوصلۂ دل تم سے

تم تو نغموں کی فصیلوں پہ بہت نازاں تھے

کیوں دبایا نہ گیا شور سلاسل تم سے

دھڑکنوں کو نظر انداز کئے جاتے ہو

پھر نہ کہنا کہ مخاطب نہ ہوا دل تم سے

اعزاز افضل

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(650) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ezaz Afzal, Jaam Khankay Tu Sanbhala Na Gaya Dil Tum Se in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 20 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ezaz Afzal.