Chashm Pur Nam Abhi Marhoon Asar Ho Na Saki

چشم پر نم ابھی مرہون اثر ہو نہ سکی

چشم پر نم ابھی مرہون اثر ہو نہ سکی

زندگی خاک نشینوں کی بسر ہو نہ سکی

میکدے کی وہی مانوس فضا اور دل زار

ایک بھی رات بہ انداز دگر ہو نہ سکی

غم جاناں غم دوراں کی گزر گاہوں سے

گزرے کچھ ایسے کہ خود اپنی خبر ہو نہ سکی

دھندلے دھندلے نظر آتے تو ہیں قدموں کے نشاں

گرچہ پر نور ابھی راہ گزر ہو نہ سکی

زندگی جام بہ کف آئی بھی محفل میں مگر

شب کے متوالوں کو توفیق نظر ہو نہ سکی

کیسے تابندہ ستاروں کا لہو جلتا ہے

شب تاریک جو عنوان سحر ہو نہ سکی

حنیف فوق

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(475) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Hanif Fouq, Chashm Pur Nam Abhi Marhoon Asar Ho Na Saki in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 11 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Hanif Fouq.