Habs Ke Aalam Mein Majas Ki Fiza Bhi Kam Nahi

حبس کے عالم میں محبس کی فضا بھی کم نہیں

حبس کے عالم میں محبس کی فضا بھی کم نہیں

روزن دیوار زنداں کی ہوا بھی کم نہیں

شورش زنجیر پا پر ہیں اگر پابندیاں

ہلکے ہلکے جنبش زنجیر پا بھی کم نہیں

گر سر مقتل نہ ہو ذکر بتاں کا حوصلہ

حجرۂ تاریک میں یاد خدا بھی کم نہیں

رہرو شب کیوں چراغ مہ سے دریوزہ گری

رات اندھیری ہو تو جگنو کی ضیا بھی کم نہیں

لاکھ محکم ہو حصار مرحبی و عنتری

غازیوں کا بازوئے خیبر کشا بھی کم نہیں

عہد گل سے سازش باد خزاں بھی کم نہ تھی

شاخ گل سے سوزش برق بلا بھی کم نہیں

کیا ہوا گر واعظ و ملا کے دل ہیں بے چراغ

گوشۂ مسجد میں ننھا سا دیا بھی کم نہیں

لذت بادہ ہے جاں پرور مگر اے اہل ذوق

زہر اشک و قطرۂ خوں کا مزا بھی کم نہیں

رئیس امروہوی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(650) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of RAIS AMROHVI, Habs Ke Aalam Mein Majas Ki Fiza Bhi Kam Nahi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 30 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of RAIS AMROHVI.