Samina Tabassum Aik Ba Shaoor Shaira (Saeed Ullah Qureshi)

ثمینہ تبسم ۔۔۔ ایک باشعور شاعرہ (سعید اللہ قریشی)

Samina Tabassum Aik Ba Shaoor Shaira (Saeed Ullah Qureshi)

ثمینہ تبسم کا تعلق اس شعوری نسل سے ہے جس نے بغاوت کا رَستہ کتابیں پڑھ کر نہیں چنا اس نے سوال اٹھانا اور آزادانہ سوچنا اپنے آباء سے نہیں سیکھا ان چھوئے موضوعات پر بے لاگ لکھنا اسے کسی این جی او نے نہیں سکھایا

ثمینہ تبسم کا تعلق اس شعوری نسل سے ہے جس نے بغاوت کا رَستہ کتابیں پڑھ کر نہیں چنا اس نے سوال اٹھانا اور آزادانہ سوچنا اپنے آباء سے نہیں سیکھا ان چھوئے موضوعات پر بے لاگ لکھنا اسے کسی این جی او نے نہیں سکھایا اس نے معاشرتی اقدار، مذہبی معاشرت، سماجی پیچیدگیوں اور اسی طرح کی کئی فیشن زدہ ترکیبات و معاملات کو اپنے ہڈوں پر سہا اور اس کے نتیجے میں ایسا عالمگیر اور نہ رکنے والا اندازِ فکر چنا جو ازل سے لگے بندھے اصولوں کے متوازی چل رہا ہے اور خود لگا بندھا نہیں ہے۔

ثمینہ تبسم کی نظم پڑھ کر یقین ہو جاتا ہے کہ واقعی شاعری فقط لطیف معاملات کا اظہار نہیں ہے بلکہ کئی کثیف معاملات بھی شاعری کے دامن کو پکڑے ہوئے ہیں، یہ الگ بات کہ کثیف تر معاملات کا اظہار بھی لطیف پیرائے میں کیا گیا ہے۔

(جاری ہے)

کچھ نظموں میں ثمینہ تبسم نے ایسے ایسے موضوعات پر قلم اٹھا لیا جن کے مقابل نظر تک نہیں اٹھتی۔ ثمینہ کی خوش قسمتی یا مصیبت یہ ہے کہ وہ اپنے اندر کی توانائیوں سے ایک عام عورت کی نسبت نہ صرف زیادہ واقف ہو چکی ہے بلکہ اپنی نظم میں ان کا آزادانہ استعمال بے دریغ کر رہی ہے۔

وہ اپنے ان ان مسائل پر قلم اٹھا رہی ہے جن میں "مرد جاتی" بلکہ عورت ذات کو بھی اب تک "بظاہر" کوئی مسئلہ نظر نہیں آ رہا تھا۔ ایک اور اہم بات یہ کہ سچ پوچھیے تو ثمینہ کی نظم نے ہمیں ثمینہ سے متعارف کروایا ہے، ورنہ تو اکثر خواتین اور ان کی مابعد الطبیعاتی شاعری سے تعارف ان کے طبیعاتی پنڈت کروا رہے ہوتے ہیں۔ ثمینہ عورت بن کے نظم نہیں کہتی کہ عورت بن کے ایسی نظم کہنا ممکن ہی نہیں۔

ایسا دکھ، ایسا کرب جنس کے اختصاص کا متقاضی نہیں ہے، یقیناً ایسی نظمیں انسان ہوئے بنا ممکن ہی نہیں ہیں۔ ثمینہ اپنے ارد گرد کی بھیڑ سے مختلف اس لئے ہے کہ اس نے سفر کیا ہے، سفر پاکستان سے کینیڈا تک کا نہیں بلکہ سفر مشرقی استحصال سے جدید ترین معاشروں کے استحصال تک کا۔ اس نے مشرق کی عورت کو بھٹوں کی اینٹوں میں پکتے دیکھا تو مغرب میں dummy میں ہوتی عورتی ڈھانچے کی تذلیل کو بھی دیکھا اور دیکھا بھی آنکھ سے نہیں بلکہ ثمینہ حساسیت کے اس مقام پر فائز ہے جہاں پورا جسم آنکھ بن جاتا ہے اور جسم بھی وہ جسے عورت کا ڈھانچہ عطا کیا گیا ہو، لہٰذا حوصلہ، جذب، مشاہدہ، احتجاج، شکایت، محبت، برداشت، اذیت اور ان سب کا ثمینہ کے ہاں اہتمام انوکھا ہونا ہی ہے۔

نہایت اہم بات یہ ہے کہ ثمینہ شاعری کی طرف شوقین عمر میں نہیں آئی بلکہ اس نے اس کارزار میں قدم شعوری سن میں رکھا ۔ تصنّع، جگالی اور کمک سے یکسر پاک ثمینہ کی نظمیں بلکہ ہر ہر سطر بتاتی ہے کہ ہم ثمینہ کی ہیں، اور ہر ہر موضوع کا انوکھا پن گویا اس پر ثمینہ کی مہر ثبت کر رہا ہے۔ اور کیوں نہ ہو کہ ثمینہ کا تعلق میرے اور بدھا کے شہر ٹیکسلا سے ہے۔

آج بھی ثمینہ اور میں دفتری چھٹیوں سے واپس اسی شہر آتے ہیں. ٹیکسلا جیسی بابرکت بستی کی ہوا کا فیض بھی ہے کہ ثمینہ کو وہ شعوری دولت نصیب ہوئی جس سے خدا نے بے شمار عورتوں اور مردوں کو آج بھی محفوظ کیا ہوا ہے۔ ان کی نظمیں "مٹی کی عورت" اور "نیا چاند" قطعاً کوئی انقلاب نہیں لیکن یہ ارتقاء کے سلسلے ہیں جو اس خطے میں صدیوں سے جہالت کے مرتبان میں دفن ہوتے دماغوں کو اچار بننے سے روکیں گے۔

(1919) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ مضامیں

مزید مضامین

Sameena Raja

ثمینہ راجا ۔۔۔ ایک سچی شاعرہ

Sameena Raja

Syed Ali Abbas Jalalpuri

سید علی عباس جلالپوری تحریر : پروفیسر لالہ رخ بخاری

Syed Ali Abbas Jalalpuri

Zeeshan Haider Ki Shaeri Se Intikhab

ادب نامہ کی طرف سے ذیشان حیدر کی شاعری سے انتخاب

Zeeshan Haider ki shaeri se intikhab

Aziz Faisal Ki Shaeri Se Intikhab By Adab Nama

ادب نامہ کی طرف سے عزیز فِصل کی شاعری سے انتخاب

Aziz Faisal ki shaeri se intikhab by Adab Nama

Azra Abbas Ki Nazmoon Ka Maozuati Tanao

عذرا عباس کی نظمو ں کا مو ضوعا تی تنوع

Azra abbas ki nazmoon ka maozuati tanao

Gulzar

گلزار صاحب کا تعارف اور کچھ منتخب کلام

Gulzar

Adnan Basheer Ki Shaairi Me Se

عدنان بشیر کی شاعری میں سے انتخاب

Adnan Basheer ki shaairi me se

Ghulam Muhammad Qasir

غلام محمد قاصر

Ghulam Muhammad Qasir

BesveN Sadi Ka Ehd Saz Shair .... Munir Niazi

بیسویں صدی کا عہد ساز شاعر ۔۔۔۔ منیر نیازی

BesveN sadi ka ehd saz shair .... Munir Niazi

Shahid Zaki Ki Shaeri Se Intikhab By Adab Nama

ادب نامہ کی طرف سے شاہد ذکی کی شاعری سے انتخاب

Shahid Zaki ki shaeri se intikhab by Adab Nama

Adan Nama Ki Taraf Se Azhar Faragh Ki Shaeri Se Kiya Gaya Intikhab

ادب نامہ کی جانب سے عمدہ شاعر اظہر فراغ کی شاعری سے انتخاب

Adan Nama ki taraf se Azhar Faragh ki shaeri se kiya gaya intikhab

Qais K Qabeelay Ka Fard

قیس کے قبیلے کا فرد ۔۔ مبشر سعید

qais k qabeelay ka fard

Haroon Tariq Ka Khasoosi Interview

ہارون طارق کا خصوصی انٹرویو

Haroon Tariq Ka Khasoosi Interview

Zulfiqar Adil Ki Shaeri Se Intikhab

زوللفقار عادل کے مجموعہ سے چند منتخب اشعار (ابرار احمد)

Zulfiqar Adil ki shaeri se intikhab

Hassan Abbasi Ka Khasoosi Interview

حسن عباسی کا خصوصی انٹرویو

Hassan Abbasi Ka Khasoosi Interview

Karachi Festival Ka Ehwal

کراچی لٹریچر فیسٹیول کا احوال

Karachi festival ka ehwal

Your Thoughts and Comments

Samina Tabassum Aik Ba Shaoor Shaira (Saeed Ullah Qureshi). Read Special Urdu Poetry related articles, Latest Poetic Columns & Tributes on Urdu poets. Read article Samina Tabassum Aik Ba Shaoor Shaira (Saeed Ullah Qureshi) and other Urdu shaiyre mazameen in Urdu. Read Urdu poets profiles, new poetry and mazameen like Samina Tabassum Aik Ba Shaoor Shaira (Saeed Ullah Qureshi) only on UrduPoint.