کہیں ایسا نہ ہو پی ٹی آئی کا ’ارسطو‘ مریم نواز سے ہار جائے

مریم نوازشہر اقتدار سے اسد عمر کے مخالف الیکشن لڑ سکتی ہیں، اگر مریم نواز نااہلی سے بچ گئیں تو وہ یقیناً اسد عمر کومشکلات سے دوچارکردیں گی،معروف کالم نگار مظہر برلاس کا اپنے کالم میں اظہار خیال

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان جمعہ جون 17:07

کہیں ایسا نہ ہو پی ٹی آئی کا ’ارسطو‘ مریم نواز سے ہار جائے
لاہور(اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔یکم مئی 2018ء) معروف کالم نگار مظہر برلاس کا اپنے ایک کالم ’کہیں ایسا نہ ہو جائے‘ میں کہنا ہے کہ سابق وزیر اعظم نواز شریف کی صاحبزادی مریم نوازشہر اقتدار سے اسد عمر کے مخالف الیکشن لڑ سکتی ہیں، اگر مریم نواز نااہلی سے بچ گئیں تو وہ یقیناً اسد عمر کومشکلات سے دوچارکردیں گی۔تفصیلات کے مطابق معروف صحافی و کالم نگار مظہر برلاس  کا اپنے ایک کالم میں کہنا ہے کہ پی ٹی آئی چئیرمین عمران خان کو ایک بات ضرور مدنظررکھنا ہوگی کہ امیدوار کس حد تک جیتنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔

بدقسمتی سے تحریک ِ انصاف کے پارلیمانی بورڈ میں ایک شخص ایسا بھی ہے جسے اپنے حلقے کی یونین کونسلز کا بھی پتہ نہیں۔ ایسے مہمان اداکار عمران خان کے لیے خطرات کی علامت ہیں۔

(جاری ہے)

عمران خان کی پارٹی میں خواتین کی تعداد دوسری پارٹیوں کی نسبت زیادہ ہے۔ انہیں اس طبقےکا بھی خیال کرنا ہوگا۔ انہیں ایسی خواتین کارکنوں کو آگے لانا ہوگا جنہوں نے تحریک ِ انصاف کی جدوجہد میں قربانیاں دی ہیں۔

جنہوں نے مردوں کے شانہ بشانہ کام کیا ہے۔ پی ٹی ا ٓئی کو سمندر پار پاکستانیوں کے حقوق کا بھی خاص خیال رکھنا ہوگا۔مظہر برلا سکا مزید کہنا تھا کہ جس شہر((اسلام آباد)) میں ٹکٹوں کے حصول کے لئےپی ٹی آئی کا رش لگا ہواہے۔ سنا ہے وہاں سے پی ٹی آئی رہنما اسد عمر کے مقابلے میں ن لیگ مریم نوازکو امیدوار بنائے گی۔ اگر مریم نواز نااہلی سے بچ گئیں تو وہ یقیناً اسد عمر کومشکلات سے دوچارکردیں گی۔

وہ اسد عمر سے زیادہ نپی تلی بات کرتی ہیں۔ تقریر میں فنی مہارت بھی مریم نواز کی زیادہ ہے۔ کہیں ایسا نہ ہو کہ پی ٹی آئی کا ’’ارسطو‘‘ الیکشن ہار جائے۔یاد رہے کہ نواز شریف اور ان کی صاحبزادی مریم نواز کو اس وقت نیب میں کئی مقدمات کا سامنا ہے۔اور دنوں اب تک 70سے زائد پیشیاں بگھت چکی ہیں۔ تاہم مریم نواز اب سیاسی دنیا میں اپنے مضبوط قدم جما چکی ہیں۔اور اپنے والد کے ہمراہ ن لیگ کے کئی جلسوں میں شرکت بھی کر چکی ہیں۔۔مریم نواز اپنی تقریروں کے دوران مخالفین کو للکارنے کا فن بھی خوب جان گئی ہیں۔اگر مریم نواز اسد عمر کے مخالف امیدوار کے طور پر سامنے آئیں تو وہ یقیناتحریک انصاف کو ٹف ٹائم دے سکتی ہیں۔