اگلا صفحہ پچھلا صفحہ

"بجلی کا بحران، عوام پریشان" پر مزید کوریج

پشاورسمیت سرحد بھر میں بجلی کی غیراعلانیہ طویل لوڈشیدنگ بدستوری جاری،ایک گھنٹے میں دودومرتبہ بجلی بندکی جاتی ہے جبکہ کم وولٹیج کے باعث برقی آلات ناکارہ ہوگئے:
پشاور(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔13اگست ۔2009ء)صوبائی دارلحکومت پشاورسمیت سرحد بھر میں بجلی کی غیراعلانیہ طویل لوڈشیدنگ بدستوری جاری ہے لوڈشیڈنگ کے دوراینہ میں مزید اضافہ بھی کردیاگیا ہے اکثراوقات ایک گھنٹے میں دودومرتبہ بجلی بندکی جاتی ہے جبکہ کم وولٹیج کے باعث برقی آلات ناکارہ ہوگئے ۔صوبہ بھر میں بجلی کی غیراعلانیہ لوڈشیدنگ کے خلاف احتجاج کاسلسلہ بھی جاری ہے تاہم لوڈشیڈنگ میں کمی کی بجائے مسلسل اضافہ کیاجارہا ہے ۔شہر اورگردنواح کے رہائشیوں نے بجلی کی غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ کے خلاف مختلف علاقوں میں احتجاجی مظاہرے کئے حکومت اورواپڈا کے خلاف شدید نعرہ بازی کی سڑکوں پر ٹائرجلا کر روڈکوہرقسم کے ٹریفک کے لئے بند کردیا ۔پشاورکے علاقوں اچینی بالا،سفیدڈھری، گلبہار،نشترآباد،خیبربازار،صدر،نوتھیہ ،گلبرک ،یونیورسٹی ٹاؤن ،ہشنگری سمیت دیگر علاقوں میں بھی بجلی کی غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ کاسلسلہ بدستوری جاری ہے اوربیشترعلاقوں میں چودہ سے پندرہ گھنٹے لوڈشیڈنگ کی جاری ہے ۔دن رات کے مختلف اوقات میں شہر میں کئی کئی گھنٹوں بجلی بندش کیوجہ سے گھروں اورمسجدوں میں پانی ناپید ہوگیا ہے جس سے عوام شدیدمشکلات میں مبتلا ہوگئے۔بجلی کی غیراعلانیہ طویل لوڈشیڈنگ سے کاروبارٹھپ ہوکررہ گئی ہے اوربارونق بازاریں بھی رات کوآٹھ بجے سے پہلے پہلے بندکی جاتی ہے جبکہ دن کے وقت بھی بجلی نہ ہونے باعث لوگوں کوشدید مشکلات کاسامنا ہے پشاورکے علاوہ صوبہ کے دیگراضلاع نوشہرہ ،مردان ،صوابی ،چارسدہ ،سمیت کئی علاقوں میں بجلی نہ ہونے کے برابرہیں۔

13/08/2009 14:18:38 : وقت اشاعت
پچھلی خبر مركزی صفحہ اگلی خبر
تمام خبریں
یہ صفحہ اپنے احباب کو بھیجئیے
محفوظ کیجئے
پرنٹ کیجئے