اگلا صفحہ پچھلا صفحہ

"بجلی کا بحران، عوام پریشان" پر مزید کوریج

پشاورسمیت صوبہ بھر میں بجلی کی غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ کاسلسلہ شروع ہوگیا:
پشاور(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔2 مئی ۔2009ء) صوبائی دارلحکومت پشاورسمیت صوبہ بھر میں بجلی کی غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ کاسلسلہ شروع ہوگیا ہے ۔پیسکو کی جانب سے جاری کردہ شیڈول کے برعکس صوبہ بھر میں غیراعلانیہ لوڈشیدنگ کاسلسلہ جاری ہے ۔گرمی کی شدت میں اضافے کے ساتھ ہی لوڈشیدنگ کادورانیہ بھی بڑھا دیاگیا ہے جس کے باعث عوام کوشدید مشکلات کاسامنا کرنا پڑرہا ہے ۔پیسکو نے روزانہ تین سے پانچ گھنٹے لوڈشیڈنگ کاشیڈول جاری کیا تھا تاہم اس کے برعکس شہریوں میں علاقوں پانچ سے سات جبکہ دیہی علاقوں میں 8سے 10گھنٹے بجلی بندکی جاتی ہے ۔بجلی کی اس غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ کے باعث عوام شدید مشکلات سے دوچارہے ،بجلی نہ ہونے کی وجہ سے طلباء کاقیمتی وقت ضائع ہورہا ہے ۔لوڈشیڈنگ کے باعث گھروں اورمسجدوں میں پانی دستیاب نہیں ۔ایک طرف گرمی کی شدت میں اضافہ ہورہا ہے تودوسری جانب بجلی بھی غائب ہورہی ہے ۔بجلی کی اس غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ کے باعث سرحدبھر کی صنعتیں بھی تباہ ہوگئیں۔سرحدچیمبر آف کامرس کے صدرحاجی شرافت علی کے مطابق سرحد میں 2254کارخانے تھے جوامن وامان کی بگڑتی ہوئی صورت حال اورغیراعلانیہ لوڈشیڈنگ کے باعث594رہ گئے باقی تما م کے تمام بند ہوگئے انہوں نے خدشہ ظاہر کیا کہ اگر یہی صورتحال رہی توباقی کارخانے بھی بندہوجائیں گے۔انہوں نے کہا کہ اب بھی زیادہ تر صنعتی یونٹس میں ڈبل شفٹ ختم کیاگیا ہے ۔پیسکو کے مطابق صوبہ سرحد میں بجلی کی363میگاواٹ شاٹ فال ہے جس کی وجہ سے لوڈشیڈنگ کی جارہی ہے ۔

02/05/2009 15:50:02 : وقت اشاعت
پچھلی خبر مركزی صفحہ اگلی خبر
تمام خبریں
یہ صفحہ اپنے احباب کو بھیجئیے
محفوظ کیجئے
پرنٹ کیجئے